نوازشریف کی روانگی عدالتی فیصلےکےبعدعمل میں آئی، وزیراعظم 56

نوازشریف کی روانگی عدالتی فیصلےکےبعدعمل میں آئی، وزیراعظم

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے پارٹی ترجمانوں کو چیف جسٹس آف پاکستان کے حالیہ بیان پر تبصرے کرنے سے روکتے ہوئے کہا ہے کہ چیف جسٹس محترم ہیں ان کےکسی بیان پرمیڈیامیں گفتگونہ کی جائے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت پارٹی ترجمانوں کااجلاس ہوا جس میں سیاسی اورمعاشی صورتحال کاجائزہ لیا گیا، اجلاس میں نوازشریف کی لندن روانگی کےبعدکی صورتحال پرگفتگو بھی کی گئی۔

اس موقع پر وزیراعظم کا کہنا تھا کہ شریف فیملی پاکستانی عوام کےسامنےمکمل بےنقاب ہوگئی، نوازشریف کی روانگی عدالتی فیصلےکےبعدعمل میں آئی، جن بیٹوں نےاستقبال کیاوہ پاکستان میں اشتہاری ہیں اور جوساتھ گیااس کےبیٹےاوردامادبھی اشتہاری ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعظم نے ملکی معاشی صورتحال پر اطمینان کا اظہارت کرتے ہوئے کہا کہ معاشی حالات دن بدن بہتر ہونےہورہے ہیں، اپوزیشن کومعیشت میں بہتری کاخوف ہے کیونکہ حکومت معیشت کواوپرلےگئی توان کی باریاں نہیں آئیں گی۔

وزیراعظم نے اپنےمؤقف اورنظریےپرڈٹ کرکھڑے رہنےکےعزم کااظہار کرتے ہوئے کرپٹ مافیاکامقابلہ جاری رکھنےکااعلان بھی کیا۔

اجلاس کےدوران پارٹی فنڈنگ کیس سےمتعلق بھی سوالات کیے گئے جس پر وزیراعظم نےپارٹی فنڈنگ کیس میں اراکین کومطمئن رہنےکاکہا ، وزیراعظم نے کہا کہ عدالتوں میں اثاثوں کی تفصیلات بتاچکےہیں، پارٹی فنڈزکےآڈٹ ہوئےہیں،کسی فکرکی ضرورت نہیں۔

وزیراعظم کی زیر صدارت اجلاس میں چیف جسٹس کےتازہ بیان کابھی ذکر ہوا ،وزیراعظم نےحکومتی ترجمانوں کو چیف جسٹس کےبیان پرتبصرےسےروک دیا،وزیراعظم کا کہنا تھا کہ چیف جسٹس محترم ہیں ان کےکسی بیان پرمیڈیامیں گفتگونہ کی جائے ۔

ذرائع کے مطابق چیئرمین نیب کےبیانات کا تذکرہ ہوا تو وزیراعظم نے کہا کہ احتساب کاحامی ہوں خواہ اپوزیشن ہو یا حکومت، نیب آزادہےجس کاچاہےبلاتفریق احتساب کرے،جس نےملک کےپیسےکھائےاس کوحساب دیناہوگا اورحکومت احتساب کی راہ میں رکاوٹ نہیں بنےگی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں