ضلعی انتظامیہ اور محکمہ فوڈ ڈیرہ ٹماٹر وں کی قیمتیں کنٹرول کرنے میں بری طرح ناکا م 17

ضلعی انتظامیہ اور محکمہ فوڈ ڈیرہ ٹماٹر وں کی قیمتیں کنٹرول کرنے میں بری طرح ناکا م

ڈیرہ اسماعیل خان ( غنچہ نیوز)ضلعی انتظامیہ اور محکمہ فوڈ ڈیرہ ٹماٹر وں کی قیمتیں کنٹرول کرنے میں بری طرح ناکا م،ٹماٹر وں کی قیمتیں انتظامیہ سے کنٹرول نہ ہو سکیں، شہری دکانداروں کے ہاتھوں لٹنے پر مجبور،

پرائس کنٹرول مجسٹریٹس غائب، دکانداروں کی لوٹ مار جاری، صارفین نے وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا، کمشنر ڈیرہ ، ڈپٹی کمشنر ڈیرہ سے نوٹس لینے کا مطالبہ کر دیا، تفصیلات کے مطابق اندرون شہر میں قائم سبزی منڈی

کے دکانداروں نے ٹماٹر کے نرخ من مرضی کے مقررکر رکھے ہیں ڈیڑھ سو روپے سے دوسو سو روپے فی کلو کے حساب سے فروخت جاری، ڈپٹی کمشنر کے زیر کنٹرول مارکیٹ کمیٹی نے روزانہ جاری کی جانے

والی سرکاری پرائس لسٹ میں ٹماٹر وں کی قیمت اسی سے ایک سو دس روپے فی کلو مقرر کر رکھی ہے، دوسری جانب دکانداروں نے پرائس لسٹ کے برعکس ٹماٹروں کی قیمت ڈیڑھ سوروپے سے دوسو روپے فی کلو

کے حساب سے فروخت شروع کر رکھی ہے جس سے ٹماٹروں کی قیمت مکمل طور پر بے لگا م ہو گئی ہے، پرائس کنٹرول مجسٹریٹوں نے بھی ٹماٹر فروشوں کے خلاف ایکشن لینا، چالان و جرمانے کرنا اورگرانفرشوں کے

خلاف بلا تفریق کارروائیاں کرنا ترک کر دی ہیں، ٹماٹر وں کی قیمتوں میں غیر معمولی اضافے کیوجہ سے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کر نا پڑ رہا ہے، شہریوں کا ا س حوالے سے کہنا ہے کہ روزانہ کی بنیاد پر سبزی

اور فروٹ کا نرخ نامہ جاری کیا جاتا ہے جسے ضلع بھر میں کوئی بھی دکاندار ماننے کو تیار نہیں جبکہ ڈپٹی کمشنر ڈیرہکے زیر کنٹرول مارکیٹ کمیٹی کا عملہ روزانہ کی بنیاد پر ریٹ لسٹیں تو جاری کرتا ہے لیکن بد قسمتی سے

دکانداروں کو دن 10 بجے کے بعد ریٹ لسٹیں مہیا کی جاتی ہیں جبکہ مضافاتی علاقوں کے دکاندار علی الصبح منڈی سے سبزی کی خریداری کرکے اپنے اپنے علاقوں میں لے جاتے ہیں جہاں من مرضی کے نرخ مقرر

کرکے صارفین کو دونوں ہاتھوں سے لوٹا جا رہاہے، ڈپٹی کمشنر ڈیرہ نے ایک درجن سے زائد پرائس کنٹرول مجسٹریٹس کو اختیارات دے رکھے ہیں لیکن بد قسمتی سے گرانفروشوں نے اپنی بادشاہت قائم کر رکھی ہے،

جو حکومتی احکامات کی دھجیاں بکھیر رہے ہیں، شہریوں نے ڈپٹی کمشنر ڈیرہ سے مطالبہ کیاہے کہ گرانفروشی کے مرتکب دکانداروں کے خلاف فوجداری مقدمات درج کروا کر پابند سلاسل کیا جائے تاکہ خود ساختہ

قائم ہونے والی مہنگائی کا خاتمہ ہو سکے۔
٭٭٭

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں