مصباح الحق کے تین عہدے، نتیجہ صفر، شائقین اور سابق کرکٹرز کی کڑی تنقید 145

مصباح الحق کے تین عہدے، نتیجہ صفر، شائقین اور سابق کرکٹرز کی کڑی تنقید

لاہور : دورہ آسٹریلیا میں وائٹ واش ہونے پر مصباح الحق کی سلیکشن اور کوچنگ پر سوالات اٹھنے لگے، شائقین اور سابق کرکٹرز نے بھی مصباح پر تنقید کے تیر برسا دیئے۔

تفصیلات کے مطابق مصباح کی کوچنگ میں پاکستان ٹیم کی کارکردگی تنزلی کا شکار ہے مصباح الحق کے بیک وقت تین عہدوں، کوچ ، چیف سلیکٹر اور بیٹنگ کوچ کے باوجود قومی کرکٹ ٹیم خاطر خواہ نتائج نہ دے سکی۔

آسٹریلیا کے مشکل دورے کے لئے کئی تجربے بھی کیے گئے جو بری طرح ناکام ثابت ہوئے، نوجوانوں کی ٹیم بنائی گئی جس میں دو بالکل نئے بولرز لئے گئے۔

اس کا نتیجہ یہ سامنے آیا کہ پہلے ٹی ٹوئنٹی ہارے پھر ٹیسٹ میں وائٹ واش ہوا، عامر اور وہاب کو ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ کھیلنے کیلئے نہ مناسکے۔

قومی کرکٹ ٹیم کی آسٹریلیا سے شرمناک شکست کے بعد شائقین میں غم و غصہ کی لہر دوڑ گئی، پورے دورہ آسٹریلیا پر بلے بازوں کی ایک جیسی بار بار غلطیوں نے مصباح کی کوچنگ پر بھی سوال اٹھادیئے۔

مصباح الحق کی کوچنگ میں اب تک پاکستان پانچ ٹی ٹوئنٹی اور دو ٹیسٹ میچز ہار چکا ہے، جس کے ساتھ مصباح پرعہدہ چھوڑنے کیلئے دباو بڑھ گیا ہے۔

سابق ٹیسٹ کرکٹرشعیب محمد نے آسٹریلیا سے شکست کا غصہ مصباح الحق پر نکالا اور کہا کہ مصباح اچھے کھلاڑی اور کپتان ضرور تھے لیکن بہترین کوچ نہ بن سکے۔ برسبین ٹیسٹ میں ہی ٹیم کی تیاریوں کاپول کھل گیا تھا۔ٹیم میں نئےبولرز شامل کرنا بڑی غلطی تھی۔

علاوہ ازیں پاکستان کی آسٹریلیا سے شکست کا سوشل میڈیا پرمذاق بن گیا، ٹیم کی ناکامی پر سوشل میڈیا پردلچسپ تبصرے کیے جارہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں