باپ کا شوق بیٹی میں منتقل، لڑکی نے نیا روپ دھار لیا 76

باپ کا شوق بیٹی میں منتقل، لڑکی نے نیا روپ دھار لیا

ڈنڈی: اسکاٹ لینڈ میں ایسی خاتون منظر عام پر آئی ہے جس نے اپنے باپ کا شوق پورا کرتے ہوئے اپنے جسم کے 90 فیصد حصوں پر ٹیٹیوز بنالیے۔

تفصیلات کے مطابق دنیا بھر میں ٹیٹوز بنانے کے شوقین افراد کی تعداد میں اضافہ ہورہا ہے، جن میں ایسی لڑکی بھی ہے جس نے اپنے باپ کو دیکھتے ہوئے اپنے جسم پر نیلے رنگ کی سیاہی سے ٹیٹوز بنالیے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق اسکاٹ لینڈ کے شہر ڈنڈی سے تعلق رکھنے والی 23 سالہ نڈائل نامی لڑکی نے 15 ہزار پاؤنڈ دے کر اپنے جسم کے 90 فیصد حصوں پر ٹیٹوز بنوائے، جبکہ ان کا کہنا ہے کہ یہ کچھ بھی نہیں باڈی کے رہ جانے والے حصوں پر بھی سیاہی سے کام کیا جائے گا۔

نڈائل کا کہنا تھا کہ اس نے جب پہلی بار جسم کے مختصر حصے پر ٹیٹو بنایا تو شوق مزید بڑھ گیا اور پھر ایک مہینے کے اندر اندر ہی جسم کے نوے فیصے حصے کو نیلی سیاہی میں رنگ دیا۔ میرے والد کو ٹیٹوز بہت پسند ہے اور میں انہیں کی طرح بننا چاہتی ہوں۔

انہوں نے کہا کہ مجھے بچپن سے ہی یہ شوق تھا لیکن اٹھارہ سال کی عمر میں مجھے قانونی طور پر جسم پر ٹیٹوز بنوانے کی اجازت ملی، آنکھوں کے نچلے حصے ابھی بھی خالی لگتے ہیں یہاں بھی ٹیٹوز بنوانے کا ارادہ رکھتی ہوں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں