دو روز کے دوران ڈالر 2 روپے 35 پیسے مہنگا ہوا 40

دو روز کے دوران ڈالر 2 روپے 35 پیسے مہنگا ہوا

ڈیرہ اسماعیل خان ( غنچہ نیوز)کورونا وائرس نے دنیا بھر میں تباہی مچا کر رکھ دی ہے۔کورونا کی وجہ سے جہاں اب تک ہزاروں اموات ہو چکی ہیں وہیں مہنگائی میں بھی اضافہ ہوا ہے۔

اب پاکستان میں ڈالر بھی اپنی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا ہے۔بتایا گیا ہے کہ انٹر بینک میں ڈالر 160 روپے کا ہو گیا ہے۔ دو روز کے دوران ڈالر 2 روپے 35 پیسے مہنگا ہوا ہے۔

انٹر بینک میں ڈالر کی قیمت میں ایک روپے کا اضافہ ہوا ہے. کاروباری ہفتے کے آخری روز انٹر بینک میں ڈالر 23 پیسے مہنگا ہوا تھا۔فاریکس ڈیلرز کے مطابق انٹر بینک میں ڈالر158.57 سے بڑھ کر 158.80 روپے کا ہوا تھا۔گزشتہ سال کے آغاز میں ڈالر کی قیمت مسلسل بڑھتی رہی، جنوری میں ڈالر 158 روپے 93 پیسے ہوا تھا

۔واضح رہے کہ جب سے پی ٹی آئی حکومت اقتدار میں آئی ہے ڈالر کی قیمت میں اضافہ ہی دیکھنے میں آیاہے۔گزشتہ سال سے ڈالر کی قیمت میں مسلسل اضافہ دیکھنے میں آرہاہے۔گزشتہ سال ڈالر کی قیمت میں حیران کن اضافہ دیکھنے میں آیا جب کہ ڈالر اپریل میں ایک دم سے141 روپے سے150 پر چلا گیا۔

پاکستان کی تاریخ میں ڈالر کی سب سے زیادہ قیمت بھی گزشتہ سال میں لگی جس میں مئی میں ڈالر اپنی بلند ترین سطح پر چلا گیا۔ ڈالر151 روپے میں فروخت ہوا جبکہ جون میں ڈالر نے پاکستانی تاریخ کی سب سے زیادہ قیمت 164 تک بھی چھلانگ ماری۔

یہ قیمت پاکستان کی تاریخ کی بلند ترین قیمت ہے۔گزشتہ سال جولائی میں ڈالر نے اڑان کم کی اور ڈالر160روپے کی قیمت پر آگیا۔یاد رہے کہ گزشتہ سال اگست میں روپے نے ڈالر کا جم کر مقابلہ کیا اور اگست میں ڈالر 157 میں فروخت ہوا

جب کہ ستمبر میں ڈالر156 روپے میں فروخت ہوا۔ گزشتہ 6 ماہ سے ڈالر کی قیمت میں کمی دیکھنے میں آرہی ہے۔ لیکن رواں سال میں دوسرے مرتبہ ڈالر کی قیمت میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے

جس میں ڈالر کی قیمت ایک مرتبہ10 پیسے بڑھی اور آج کاروباری ہفتے کے تیسرے روز ڈالر کی قیمت میں 50 پیسے کا اضافہ ہوا ہے۔بدھ کے دن ڈالر کی قیمت 155.80 روپے ہو گی۔
٭٭٭

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں