حکومت کو معاشی استحکام، عوام کی فلاح وبہبود وعلاقائی ترقی میں دلچسپی نہیں’احمد کنڈی 72

حکومت کو معاشی استحکام، عوام کی فلاح وبہبود وعلاقائی ترقی میں دلچسپی نہیں’احمد کنڈی

ڈیرہ اسماعیل خان (سٹاف رپورٹر) چشمہ رائٹ بنک لفٹ کینال کا منصوبہ بجٹ سے خارج کر دیا گیا ہے جس سے واضح ہوتا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کو قومی وصوبائی معیشت کے استحکام، عوامی فلاح وبہبود اور علاقائی ترقی میں دلچسپی نہیں، دریائے سندھ میں خیبر وپختونخوا کے حصے کا پانی صرف ڈیرہ میں ہی استعمال ہو سکتا ہے جسے دیگر صوبے بلامعاوضہ استعمال کر رہے ہیں، ہمیں پن بجلی کی رائلٹی دی جا رہی ہے نہ ہی گرگری گیس سے پورا حصہ دیا جا رہا ہے

بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ اور گیس کی لوڈ مینجمنٹ کے پی کے بالخصوص جنوبی اضلاع کے عوام کے ساتھ سراسر زیادتی ہے، ان خیالات کا اظہار ڈیرہ سٹی ٹو سے منتخب رکن صوبائی اسمبلی اور ڈویژنل صدر پی پی پی احمد کریم خان کنڈی نے اعتدال نیوز کے پروگرام سندھ کنارے میں سینٹر صحافی وایگزیکٹوایڈیٹر روزنامہ ”اعتدال ”ابوالمعظم ترابی سے گفتگوکرتے ہوئے کیا،انہوں نے کہا کہ حکومت ناکام ہو چکی ہے،

بی آر ٹی کے لئے پانچ سو ملین روپے کا قرض لیکر صوبے کو مزید مقروض کر دیا ہے اور تاحال منصوبہ زیر تکمیل ہے، جو خزانے پر بوجھ ہو گا جبکہ لفٹ کینال پراجیکٹ معیشت کی بہتری، غذائی خود کفالت اور غربت وافلاس کے خاتمے کی بنیاد بنے گا، انہوں نے کہا کہ حکمرانوں کے پاس ٹھوس پالیسی نہیں، حکومت عارضی حکمت عملیوں کے تحت چلائی جا رہی ہے، ایشوز کی سیاست کرنی چاہئے اور ان کی کوئی ترجیحات ہی نہیں ہیں،

بی آر ٹی پر پیسہ ضائع اور کرپشن کی نذر کر دیا ہے، لفٹ کینال قومی منصوبہ اور معاشی مضبوطی کی ضمانت ہے، حکمران غیر سنجیدہ اور ان کی ترجیحات درست نہیں، گرگری گیس کے پی کے عوام کو نہیں ملے گی تو بلوچستان کی مانند احساس محرومی اور مایوسی جنم لیگی، بجلی، گیس اور پانی ہمارے قیمتی اثاثے ہیں اور ہمیں ہی ان سے محروم رکھا جا رہا ہے۔ دوسرے صوبے ان کا استعمال کر رہے ہیں

جب ہمیں گندم کی ضرورت ہوتی ہے تو صوبائی سرحد بندکر دی جاتی ہے انہوں نے کہا کہ غیر متعلقہ لوگوں کو شعبہ جات سونپ دیئے گئے ہیں جو انہیں چلانے کی اہلیت نہیں رکھتے، غلط حکومتی فیصلوں اور اقدامات کے نتائج مستقبل میں قوم کو بھگتنا ہوں گے، انہوں نے کہا کہ محکمہ پولیس کی بدنامی کا باعث بننے والی کالی

بھیڑوں کو نکال باہر کیا جانا چاہئے، ٹانک بس اڈہ کی ناحق منتقلی کا مقدمہ بھرپور طریقے سے لڑینگے صوبائی اسمبلی میں حکومت کے سامنے سوالات رکھ دیئے جن کے جوابات چاہئیں، عوام کو اپنے حقوق سے بارے شعور وآگاہی حاصل کر کے ان کے حصول کی خاطر آواز بلند کرنی ہو گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں