خود کار ڈرافٹ 82

بھارت میں کورونا ویکسین سے ایک شخص کی طبیعت بگڑ گئی، 51 کی حالت غیر

نئی دہلی: بھارت میں کورونا ویکسینیشن مہم کے پہلے ہی روز ایک نوجوان کو پیچیدہ مضر اثرات کے باعث انتہائی نگہداشت کے وارڈ میں داخل کرنا پڑا جب کہ دیگر 51 افراد میں معمولی سائیڈ ایفیکٹس سامنے آئے۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق بھارت میں دنیا کی سب سے بڑی کورونا ویکسین مہم کے آغاز پر ہی ٹیکہ لگنے کے بعد 22 سالہ سیکیورٹی گارڈ میں شدید سر درد، الرجی اور سانس لینے میں تکلیف کی علامات ظاہر ہونے پر آل انڈیا انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز کے آئی سی یو میں داخل کرلیا گیا۔

اس حوالے سے نئی دہلی کے وزیر صحت ستیندر جین نے میڈیا کو بتایا کہ کورونا ویکسین سے صرف ایک شخص میں طبی پیچیدگیاں سامنے آئیں جب کہ دیگر 51 افراد میں معمولی اثرات تھے اور انہیں اسپتال میں داخلے کی ضرورت پیش نہیں آئی۔

بھارت میں مقامی سطح پر تیار کردہ دو کورونا ویکسین کی منظوری دی گئی ہے جن میں سے ایک کے ٹرائل مکمل نہ ہونے کے باوجود اس کے استعمال کی منظوری پر احتجاج بھی کیا گیا تھا۔ ابھی یہ واضح نہیں کہ مضر اثرات کون سی ویکسین کے سامنے آئے ہیں۔

روان برس جولائی تک 30 کروڑ افراد کو کورونا ویکسین لگانے کے لیے بھارت بھر میں 3 ہزار 352 سینٹرز قائم کیے گئے ہیں جب کہ ایک لاکھ 50 ہزار سے زائد طبی عملے کو تربیت فراہم کی گئی ہے جب کہ پہلے روز 2 لاکھ افراد کو ویکسین لگائی گئی ہے۔

واضح رہے کہ بھارت دنیا بھر میں کورونا سے متاثر ہونے والا دوسرا ملک ہے جہاں اس وبا سے متاثر ہونے والوں کی تعداد ایک کروڑ 5 لاکھ اور 55 ہزار سے زائد ہوگئی ہے جب کہ اس مہلک وائرس نے ڈیڑھ لاکھ سے زائد افراد کی جان لے لی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں