وزیراعظم کا حلیم عادل کے خلاف دہشتگردی کیس اور کمرے سے سانپ نکلنے پر اظہار تشویش 62

وزیراعظم کا حلیم عادل کے خلاف دہشتگردی کیس اور کمرے سے سانپ نکلنے پر اظہار تشویش

کراچی: وزیراعظم عمران خان نے قائد حزب اختلاف سندھ حلیم عادل شیخ پر دہشت گردی کا مقدمہ درج ہونے پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق گورنر سندھ عمران اسماعیل نے وزیراعظم عمران خان سے ٹیلی فونک رابطہ کیا اور وزیر اعظم کو اپویشن لیڈر سندھ حلیم عادل شیخ کی گرفتاری کے حوالے سے آگاہ کیا۔

اس خبرکوبھی پڑھیں: تھانے میں حلیم عادل شیخ کے کمرے میں زہریلا سانپ نکل آیا
گورنر سندھ نے بتایا کہ اپویشن لیڈر حلیم عادل شیخ پر دہشت گردی کا مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ وزیراعظم نے حلیم عادل پر دہشت گردی کا مقدمہ درج ہونے پر تشویش کا اظہار کیا۔ جب کہ اپویشن لیڈر کے کمرے میں سانپ کی موجودگی پر بھی وزیر اعظم نے اظہار برہمی کرتےہوئے کہا کہ اپویشن لیڈر کے کمرے میں سانپ کی موجودگی پر انکوائری ہونی چاہئے۔

گورنر سندھ نے حلیم عادل کے ساتھ پولیس کے رویئے کے حوالے سے وزیراعظم کو بتایا کہ آئی جی سندھ صوبائی حکومت کی ایماء پر کاروائی کررہے ہیں، آئی جی سندھ کا رویہ جانبدارانہ ہے۔

واضح رہے کہ 16 فروری کو کراچی کے علاقے ملیر میں صوبائی اسمبلی کی نشست پی ایس 88 میں ضمنی انتخاب کے دوران ریٹرننگ آفیسر کے حکم پر ایس ایس پی ملیر عرفان بہادر غلام حسین گوٹھ کے پولنگ اسٹیشن نمبر 77 پہنچے جہاں حلیم عادل شیخ اور پی ٹی آئی کے کارکنان موجود تھے، ایس ایس پی ملیر نے انہیں الیکشن کمیشن کے حکم سے آگاہ کیا اور انہیں لے جانے کی کوشش کی جس پر کارکنان نے مزاحمت کرتے ہوئے حلقہ چھوڑنے سے انکار کردیا تھا مگر بات چیت کے بعد پولیس حکام حلیم عادل شیخ کو وہاں سے لے جانے میں کامیاب ہوگئے۔ حلیم عادل شیخ اس وقت جسمانی ریمانڈ پر پولیس کی حراست میں ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں