6

بھاری مالی و جانی نقصان؛ ہزاروں اسرائیلی فوجیوں کا غزہ سے انخلا

جنگ میں اسرائیلی معیشت کے نقصان میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے اور لڑائی کے خاتمے کا امکان نظر نہیں آرہا، اسرائیلی فوج

جنگ میں اسرائیلی معیشت کے نقصان میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے اور لڑائی کے خاتمے کا امکان نظر نہیں آرہا، اسرائیلی فوج

 غزہ:اسرائیلی فوج نے غزہ سے اپنی پانچ بریگیڈز پر مشتمل ہزاروں فوجیوں کو واپس بلانا شروع کردیا۔

امریکی اخبار نیویارک ٹائمز کے مطابق اسرائیلی فوج نے کہا کہ غزہ کی پٹی سے ہزاروں فوجیوں کو عارضی طور پر واپس بلایا جارہا ہے۔ حماس کے ساتھ جنگ ​​شروع ہونے کے بعد سے یہ علی الاعلان کیا جانے والا سب سے بڑا انخلا ہے۔

اسرائیلی فوج نے اس انخلا کی وجہ یہ بیان کی کہ تین ماہ سے جاری جنگ میں اسرائیلی معیشت کے نقصان میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے اور لڑائی کے خاتمے کا کوئی امکان نظر نہیں آرہا۔

اسرائیلی فوج نے ایک بیان میں کہا کہ کم از کم دو بریگیڈز کے ریزرو فوجیوں کو اسی ہفتے گھر بھیج دیا جائے گا، اور تین بریگیڈوں کو طے شدہ ٹریننگ کے لیے واپس لے جایا جائے گا۔ ایک بریگیڈ میں فوجیوں کی تعداد 4 ہزار تک ہوسکتی ہے، اور چونکہ اسرائیلی فوج نے اب تک یہ نہیں بتایا کہ اس نے غزہ میں کتنے فوجی تعینات کیے ہیں، اس لیے یہ واضح نہیں کہ اس انخلا کے بعد وہاں کتنی فوج بچے گی۔

اسرائیلی فوج نے کہا کہ “اس اقدام سے ملک پر معاشی بوجھ میں نمایاں کمی آئے گی اور ہم نئے سال میں ہونے والی سرگرمیوں کے لیے طاقت جمع کرنے کے قابل ہو سکیں گے۔”

اسرائیل پر اپنے ان لاکھوں شہریوں کا معاشی بوجھ بھی حماس کے حملے کے بعد سرحدوں پر اپنے گھر بار چھوڑ کر بھاگ گئے تھے۔

اسرائیل میں غیرجانبدار تھنک ٹینک ٹوب سنٹر سوشل پالیسی اسٹڈیز نے بھی کہا، ہے کہ اس سہ ماہی میں اسرائیلی معیشت میں 2 فیصد گراوٹ کی توقع ہے، کیونکہ بہت سے شہری کام کاج چھوڑ کر فوج میں ریزرو ڈیوٹی پر تعینات ہیں یا اپنے آبائی شہروں میں کاروبار بند کرنے پر مجبور ہیں۔

اسرائیلی حکومت مسلسل عوام سے یہی کہہ رہی ہے کہ یہ ایک طویل فوجی مہم ہوگی تاہم بعض ناقدین اپنی حکومت کے اس دعوے پر شکوک و شبہات کا اظہار کر رہے ہیں حماس کو ختم کرنے کا مقصد قابل عمل بھی یا نہیں۔

غزہ میں اسرائیل کی وحشیانہ بمباری میں اب تک 22 ہزار فلسطینی شہید اور 60 ہزار زخمی ہوچکے ہیں۔ شہدا اور زخمیوں میں 70 فیصد خواتین اور بچے ہیں۔





Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں