1

وٹامن اے کا جِلد پر لگے زخم بھرنے میں اہم کردار

 نیویارک:جب بھی گرنے کی وجہ سے چھوٹی موٹی خراش آتی ہے تو جلد میں موجود خاص خلیے زخم کو ٹھیک کرنے کیلیے متحرک ہوجاتے ہیں۔ نئی تحقیق ہمیں بتاتی ہے کہ یہ وہ مرحلہ ہوتا ہے جہاں وٹامن اے کا کردار بہت اہم ہوتا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق امریکی محققین کی جانب سے کی گئی ایک حالیہ تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ زخم لگنے کے بعد وٹامن اے خلیات کو ہدایت دیتا ہے کہ جِلد کی ’مرمت‘ کی جائے اور اس کے ساتھ ساتھ بعد وہاں بالوں کی بھی نشونما کی جائے۔

نیویارک میں راک فیلر یونیورسٹی کی اس تحقیق کے مطابق یہ خاص خلیے دراصل بالوں کے خام خلیے (stem cells) ہوتے ہیں۔ لیکن یہ عام طور پر اس وقت تک کام نہیں کر سکتے جب تک کہ وہ اس بات کا تعین نہ کر لیں کہ جلد کو ٹھیک کرنا ہے یا بالوں کی نشونما کرنی ہے۔ یہ ہدایت وٹامن اے فراہم کرتا ہے۔

چونکہ جِلد اکثر زخمی ہوتی ہے اس لیے بالوں کے خلیے جِلد کو پہنچنے والے نقصان کی تلافی کیلئے فوراً متحرک ہوجاتے ہیں۔

راکفیلر یونیورسٹی کی محقق ایلین فوچس نے کہا کہ اس نئے مطالعے کے بعد اب ہم جِلد اور بالوں کی مختلف خرابیوں اور کینسر کو روکنے کے طریقہ کار کو بہتر طور پر سمجھ سکتے ہیں۔

محققین نے یہ بھی دریافت کیا کہ وٹامن اے کا مناسب تناسب ان خلیوں کی موثر فعالیت کے لیے انتہائی ضروری ہے۔ وٹامن اے کی بہت زیادہ مقدار خلیات کے کردار کو مناسب طریقے سے تبدیل کرنے میں رکاوٹ بن سکتی ہے جبکہ کم سطح بالوں کی نشوونما کے بجائے جلد کو ٹھیک کرنے پر بہت زیادہ وقت صرف کر سکتی ہیں۔

خیال رہے کہ جسم میں خلیات جب اپنے متعین کردہ کام کو تبدیل کرتے ہیں تو اسے lineage plasticity کہا جاتا ہے۔ یہ عمل کینسر اور زخم کی شفا یابی دونوں میں ہوتا ہے.





Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں