بجٹ ،کرونا،امریکی بلاگر سینتھیا رچی اور شوگر سکینڈل !اسلام آباد کی فضا میں حدت:سینئر صحافی محسن رضا خان کا تجزیہ

کرونا اور سینتھیا رچی کے حملے‘بجٹ کے آمد اور شوگر سیکنڈل پر وزیر اعظم پر انگشت نمائی:سینئر صحافی محسن رضا خان کا تجزیہ

اسلام آباد:تجزیاتی رپورٹ:محسن رضا خان:فاقی بجٹ 12 جون کو پاکستان کے دائمی مشیر خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ پیش کریں گے بجٹ پیش کرنے میں عمران خان کی حکومت بہت تیز ہے یہ ایک سال میں کئی بجٹ بھی پیش کرسکتے ہیں,خیبر پختونخوا اور پنجاب کے بجٹ کا جائزہ لینے کے لئے دونوں صوبوں کا اجلاس چھٹی کے روز بنی گالا میں ہوا جس میں صوب کے وزیر اعلی محمود خان اور پنجاب کے وزیر اعلی عثمان بزدار بھی شریک ہوئے,وفاقی دارالحکومت بجٹ کی گہما گہمی کے ساتھ کورونا بھی سہما ہوا ہے پنجاب کی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد کا کہنا کہ کورونا وائرس سے لاہور اور راولپنڈی سب سے زیادہ متاثر ہیں اسی وجہ سے اسلام آباد بھی راولپنڈی کے ساتھ جڑواں ہونے کی وجہ سے کورونا سے بری طرح متاثر ہے.پاکستان میں کورونا کے مثبت کیسز چین سے بھی بڑھ گئے ہیں

لیکن اس کے ساتھ ساتھ امریکی بلاگر سینتھیا رچی اور شوگر سکینڈل کی رپورٹ نے بھی خاصی گرمی پیدا کررکھی ہے سینتھیا رچی کے پہلے عالم اسلام کی پہلی خاتون وزیراعظم محترمہ بے نظیر بھٹو اور ان کے شوہر سابق صدر آصف علی زرداری کے خلاف الزامات نے ماحول میں خاصی تلخی پیدا کردی تھی لیکن بعد میں کئی سالوں سے پاکستان میں مقیم امریکی بلاگر کی سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی اور کی کابینہ کے 2 وزرا رحیم یار خان سے تعلق رکھنے والے مخدوم شہاب الدین اور سیالکوٹ سے تعلق رکھنے والے رحمان ملک جو 90 کی دھائی میں پشاور میں ڈائریکٹر ایف آئی اے بھی رہ چکے ہیں پر جنسی ہراسگی کے الزامات عائد کئے اور ایف آئی اے سے بھی رجوع کیا
پاکستان پیپلزپارٹی سے تعلق رکھنے والے تینوں رہنماؤں ان الزامات کی تردید بھی کردی اس کے ساتھ ساتھ شوگر سکینڈل کی رپورٹ پر کی گئی 7 اہم سفارشات وزیراعظم نے منظور کرلیں لیکن اپوزیشن کی انگلیاں مسلسل وزیراعظم اور کابینہ پر اٹھ رہی ہیں

پشاور بی آر ٹی مالم جبہ ہیلی کاپٹر اور کئی ایسے دیگر کیسز کے علاوہ شوگر سکینڈل اور امریکی بلاگر کے الزامات سے خیبر پختونخوا کے سیاستدان بجے ہوئے ہیں,کورونا وائرس سے لیکن خیبر پختونخوا نہیں بچ سکا اس کے کئی پارلیمنٹیرین بھی اس سے متاثر ہوئے بغیر نہ دہ سکے خیبر پختونخوا میں کورونا وائرس کے آنے کے بعد ادویات اور دیگر سامان کی خریداری کے حوالے سے وفاقی دارالحکومت میں خاصی جہ میگوئیاں ہورہی ہیں

صوابی سے تعلق رکھنے والے سپیکر اسد قیصر اور کراچی سے تعلق رکھنے والے گورنر عمران اسماعیل بھی کورونا کا شکار ہوئے اور اللہ کے فضل سے دونوں صحت یاب ہوچکے ہیں,لیکن اس بیماری میں اسد قیصر اور عمران اسماعیل کا فرق نظر آیا
گورنر سندھ عمران اسماعیل کو کورونا ٹیسٹ پازیٹیو آنے کے بعد انہوں نے سماجی روابط کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کیا جس میں انہوں نے اپنے ٹیسٹ مثبت آنے پر وزیراعظم عمران خان کا خاص طور پر ذکر کیا انہیں عمران خان نے لڑنا سکھایا ہے اور وہ اس بیماری سے بھی لڑیں گے وزیر اعظم عمران خان یہ ٹویٹ پڑھ کر یقیننا متاثر ہوئے ہونگے جس کا اظہار انہوں نے دوسرے روز ہی جوابی ٹویٹ داغ کر کیا جس میں انہوں نے عمران اسماعیل کی جلد صحت یابی کے لئے دعا کی.

اس کے بعد اسپیکر اسد قیصر کا بھی کورونا ٹیسٹ مثبت آگیا ان کے بچے بھی متاثر ہوئے انہوں نے بھی ٹویٹ کے ذریعہ اطلاع لیکن گورنر سندھ کی طرح اپنی بیماری میں وزیراعظم کی جدوجہد کا شکر کرنا بھول گئے بس وزیراعظم بھی انہیں نیک تمناؤں کا ٹویٹ کرنا بھول گئے اور 12 دن وزیراعظم کو سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کو اس وقت فون کیا جب اسد قیصر آئی سی یو میں داخل ہوگئے تھے ملک میں گزشتہ دنوں 4 ارکان اسمبلی کورونا کی وجہ سے شہید ہو چکے ہیں جن میں اورکزئی سے سینئر پارلیمینٹیرین منیر اورکزئی نوشہرہ سے سابق وزیر اور ایم پی آر میاں جمشید الدین کاکا خیل پنجاب سے ایم پی اے شوکت منظور چیمہ اور سندھ کے وزیر غلام مرتضی بلوچ ہیں قرنطینہ کے اس دور میں ہماری اشرافیہ تعزیت کے لئے تو نہیں جاسکتی لیکن اب لگتا یہ ہے کہ انہوں نے ٹویٹ بھی قرنطینہ میں بٹھا دئے ہیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں