ڈی پی او ڈیرہ نجم الحسنین لیاقت محرم 2022 کے سیکورٹی پلان کے حوالے سے میڈیا سے گفتگو کر رہے ہیں

ڈیرہ اسماعیل خان کے لیے محرم الحرام کیلیے سیکیورٹی پلان جاری

ڈیرہ اسماعیل خان(مصطفیٰ مغل) ضلع ڈیرہ اسماعیل خان کے لیے محرم الحرام 2022 کے سیکیورٹی پلان کو حتمی شکل دے دی گئی۔
   سیکیورٹی پلان کے حوالے سے ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر کیپٹن (ر) نجم الحسنین لیاقت نے میڈیا کے نمائندوں کو تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ ضلع ڈی آئی خان کو 3 زونز اور 8 سیکٹرز میں تقسیم کیا گیا ہے جہاں 7500 سے زائد پولیس افسران و اہلکار ڈیوٹی سرانجام دیں گے۔

سیکٹر 1 تا 4 میں سٹی اور کینٹ تھانوں کی حدود شامل ہیں، سیکٹر 5 میں ڈیرہ ٹاؤن اور صدر تھانے، سیکٹر 6 میں تھانہ کڑی خیسور، تھانہ بند کورائی اور تھانہ پہاڑ پور، سیکٹر 7 میں تھانہ پروا اور تھانہ گومل یونیورسٹی کی حدود شامل ہیں جبکہ سیکٹر 8 میں تھانہ کلاچی کی حدود شامل ہیں، ہر زون کا انچارج سپریڈنڈنٹ پولیس (ایس پی) رینک کا افسرہوگا جبکہ سیکٹر کا انچارج ڈپٹی سپریڈنٹ پولیس (ڈی ایس پی) رینک کا افسر ہوگا۔ڈی پی او نے بتایا کہ ضلع بھر میں سرکلر روڈز سمیت شہر کے داخلی و خارجی راستوں پر 96 مختلف مقامات پر ناکہ بندی کی گئی ہے جس میں 41 داخلی اور 38 خارجی راستوں پر ناکہ بندی کی گئی ہے، اسی طرح ڈیرہ دریا خان پل، چشمہ بیراج، چندا چیک پوسٹ، رامک، ہتھلہ اور درازندہ چیک پوسٹوں پر 6 مقامات پر اور سی آر بی سی پل پر 11 مقامات پر ناکہ بندی کی گئی ہے۔

محرم الحرام میں یوپِ عاشورہ کو ایک ماتمی جلوس کا منظر

ڈی پی او نے ماتمی جلوسوں اور مجالس کی سیکیورٹی کے حوالے سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ ضلع ڈیرہ میں کل 69 امام بارگاہیں ہیں جن میں سے 26 لائسنس یافتہ اور 43 روایتی امام بارگاہیں ہیں، یومِ عاشورہ تک ضلع بھر میں 194 چھوٹے بڑے ماتمی جلوس نکالے جائیں گے جن میں 94 لائسنس یافتہ اور 100 روایتی جلوس ہوں گے، ضلع بھر میں مجموعی طور پر 642 سے زائد مجالس عزاء کا انعقاد کیا جائے گا، یوم عاشورہ کو بستی ڈیوالہ و استرانہ سے لیکر اندرون شہر وسرکلر روڈ سے کوٹلی امام حسین تک جلوس کے راستوں میں آنے والی113گلیوں کو سیل کیا جائے گا، 124چھتوں پر سیکورٹی اہلکار تعینات ہونگے جبکہ پولیس کے ساتھ ساتھ بم ڈسپوزل اسکواڈ کے اہلکار، سراغ رساں کتے جلوس کے ساتھ ہوں گے اور جلوس کے راستوں کو کلیئر کریں گے۔

محرم الحرام کے ایک ماتمی جلوس میں علم لہرانے کا منظر

سیکیورٹی پلان کے مطابق، سیکیورٹی کو بہتر بنانے کے لیے ایلیٹ فورس، فرنٹیئر کانسٹیبلری کے دستے بھی تعینات کیے جائیں گے جب کہ کسی بھی ہنگامی یا ناخوشگوار صورتحال سے نمٹنے کے لیے پاک فوج کی کوئیک ری ایکشن فورسز (کیو آر ایف) بھی الرٹ رہیں گی۔ڈی پی او نے مزید بتایا کہ ڈویژنل سطح پر آر پی او آفس میں، ضلعی سطح پر ڈی پی او آفس میں جبکہ 5 تحصیلوں میں بھی الگ الگ کنٹرول رومز قائم کیے گئے ہیں، اسی طرح مرکزی وائرلیس کنٹرول روم بھی پہلے کی طرح کام کرتا رہے گا۔ڈی پی او کے مطابق یکم محرم سے ڈبل سواری پر مکمل پابندی ہو گی جبکہ 9 اور 10 محرم کو موٹر سائیکل کا استعمال مکمل طور پر ہو گا۔

محرم الحرام کے دوران پولیس اہلکار اپنی ڈیوٹیاں سر انجام دیتے ہوئے

   ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر کیپٹن (ر) نجم الحسنین لیاقت نے شہریوں سے اپیل کی کہ وہ شہر کے امن کی خاطر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ساتھ تعاون کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں